مرغ کو ہاتھ سے ذبح کرنے کا طریقہ

(۱) مرغ ذبح سے قبل زندہ اور تندرست ہو نا چاہیے۔
(۲)سن کرنے کے لیے تو۰۲سے۰۳ وولٹ کرنٹ میں دس سے پندرہ سکنڈ تک مرغ کو لگایا جاسکتا ہے، کرنٹ کی شدت اور وقفہ بس اتنا ہو کہ اگر سن کیا ہو ا مرغ ذبح نہ کیا جائے تو اسے چند سکنڈ میں اپنی اصلی حالت میں واپس آجانا چاہیے۔
(۳) ذبح کرنے والا شخص ذبح کرنے سے قبل بسم اللہ اللہ اکبر ضرور پڑھے۔
(۴) مرغی کے گردن میں حلق، نرخرے،اور خون کے بڑی رگیں (ودج اور شریان کی رگیں)ضرور کٹنی چاہیں
(۵) ذبح اور پانی میں ڈالنے کے درمیان خون بہنے کی مدت کم ازکم دو منٹ ہو نی چاہیے۔
(۶)مرغ پانی میں جانے سے قبل ساکت او رٹھنڈا ہو گیا ہو۔
(۷)صفائی والے پانی کا درجہ حرارت زیادہ سے زیادہ 64 C.ہو نا چاہیے،گرم پانی میں مرغ زیادہ سے زیادہ ۰۰۱ سیکنڈ رکھا جائے۔پانی کا درجہ حرارت جتنا زیادہ ہو اسی حساب سے پانی میں رکھے جانے کے وقفہ ہو ناچاہیے۔
(۸)مذبح خانے صاف شفاف اور صحت بخش ہوں۔
(۹) اس کے لیے موقع بہ موقع پابندی کے ساتھ جراثیم کش دواؤں کا استعمال کیا جانا چاہیے۔
(۱۰)ذبح کے عمل کے لیے استعمال کی جانے والی مشینیں جراثیم کش دواؤں سے صاف کیے جائیں۔
(۱۱)کارکنان کو حفظان صحت کے مطابق عمل کرنے کی تربیت دی جائے، انہیں دستانے، جوتے اور جراثیم کش دوائیں مہیا کرائی جائیں۔
(۱۲) چاقو اور دیگر سامانوں کو80.Cگرم پانی میں صاف کیا جائے۔
(۱۳) گرم پانی کو موقع بہ موقع بدل دیا جائے۔
(۱۴)مرغ کا گوشت مضر جرثوموں مثلا سالمونیلا، ای کولی، اسٹیفائیلوکوکی وغیرہ سے پاک ہو۔